Phir Charagh e Lala Se Roshan Hovay-Kalam-e-Iqbal: Download MP3 Worlds Largest Collection of Qawwali, Arfana & Sufiana Kalam, Hamd & Naat

Phir Charagh e Lala Se Roshan Hovay Koh O Daman

Kalaam/Poetry  اردو urdu ,  Dr. Allama Muhammad Iqbal

 

Phir Charagh e Lala Se Roshan Hovay is beautiful poem from Baal-e-Jibreel. Iqbal was not the poet of romanticism, as there is much more deeper meaning to his poetry. However, this poem starts very differently, which shows his romantic side. Yet again, he turns the tide back to discovery of self as seen in verse

apne mann mein doob kar paa ja suragh e zindagi

tu agar mera nahin banta na ban, apna to ban

 


 Download 6.6MB (04.16)

 


Lyrics

پھر چراغ لالہ سے روشن ہوئے کوہ و دمن
مجھ کو پھر نغموں پہ اکسانے لگا مرغ چمن
پھول ہيں صحرا ميں يا پرياں قطار اندر قطار
اودے اودے ، نيلے نيلے ، پيلے پيلے پيرہن
برگ گل پر رکھ گئی شبنم کا موتی باد صبح
اور چمکاتی ہے اس موتی کو سورج کی کرن
حسن بے پروا کو اپنی بے نقابی کے ليے
ہوں اگر شہروں سے بن پيارے تو شہر اچھے کہ بن
اپنے من ميں ڈوب کر پا جا سراغ زندگی
تو اگر ميرا نہيں بنتا نہ بن ، اپنا تو بن
من کی دنيا ! من کی دنيا سوز و مستی ، جذب و شوق
تن کی دنيا! تن کی دنيا سود و سودا ، مکروفن
من کی دولت ہاتھ آتی ہے تو پھر جاتی نہيں
تن کی دولت چھاؤں ہے ، آتا ہے دھن جاتا ہے دھن
من کی دنيا ميں نہ پايا ميں نے افرنگی کا راج
من کی دنيا ميں نہ ديکھے ميں نے شيخ و برہمن
پانی پانی کر گئی مجھ کو قلندر کی يہ بات
تو جھکا جب غير کے آگے ، نہ من تيرا نہ تن

Suggested for you

Comments